علیحہ صدف جماعت:اے لیول ، اسلامیہ انگلش سکول، ابو ظبی، متحدہ عرب امارات

پاکستان میں قومی زبان کی ضرورت و اہمیت

قومی زبان کسی بھی خطے میں بہت اہمیت رکھتی ہے۔ ہر قوم کی پہچان ان کی زبان سے ہوتی ہے۔ ہماری قومی زبان نصاب کا حصہ ہونی چاہیے تا کہ آنے والی نصلیں اپنی قومی زبان سے فراموش نا ہو پائیں اور یہ نسل در نسل آگے منتقل ہوتی جائے۔

اردو ہماری قومی زبان ہے اور پورے ملک میں بولی جاتی ہے۔ یہ ان منفرد زبانوں میں سے ایک ہے جو ارتقائی عمل سے گزر کر ایک متحرک زندہ زبان کا درجہ حاصل کر کے ترقی کر رہی ہے۔

لیکن بدقسمتی سے یہ بتانا افسوسناک ہے کہ ہماری قومی زبان کو نظر انداز کیا جاتا ہے جبکہ انگریزی زبان کو بہت زیادہ اہمیت دیجاتی ہے۔ ایک بھرپور ثقافت کے نگہبان ہونے اور زندہ زبان ہونے کے باوجود، ہم ایک مردہ معاشرے کی طرح برتاؤ کرتے ہیں جو اردو کو ثانوی حیثیت دیتے ہیں اور انگریزی بولنے پر فخر کرتے ہیں، اسے وقار کی علامت سمجھتے ہیں۔

لیکن حقیقت میں یہ شرم کی بات ہے۔اگر آپ مسلمان ہیںیا آپ کو اسلامی مذہب میں دلچسپی ہے تو اردو زبان سیکھنا بہت ضروری ہے۔ اردو میں بہت سی مذہبی تحریریں ہیں جن میں عربی کے علاوہ اسلامی ادب کا سب سے بڑا ذخیرہ اردو زبان میں موجود ہے۔ اردو ان ثقافتی زبانوں میں سے ایک ہے جس کا ایک بھرپور ادب ہے اور یہ ہندی، پنجابی، فارسی، ترکی اور سنسکرت سے واقف ہے۔

اردو سیکھنا ایک فرد کو دیگر مذکور زبانوں کو جاننے کے لیے بھی بہتر انداز میں پیش کر سکتا ہے۔اس سے بچوں کو بہت زیادہ ثقافتی علم حاصل کرنے میں مدد مل سکتی ہے۔ جب بچے اسے سیکھتے ہیں، تو انہیں ہماری تاریخ کے بارے میں بہت کچھ سیکھنے کو ملتا ہے۔ ہمارے بچوں کو ہماری بھرپور تاریخ کے بارے میں جاننا چاہیے۔ حال کو سمجھنے کے لیے ہمیں ماضی کو اچھی طرح جاننا چاہیے۔


یہ بھی پڑھیں


اگر پاکستان کے لوگ دوسرے ممالک میں اپنی قومی زبان بولیں گے تو اس سے دوسرے لوگوں پر مثبت اثرات مرتب ہوں گے۔ دوسرے لوگ اردو کے بارے میں جان سکیں گے اور زبان کی تعریف کریں گے۔

آخر میں میں یہ کہنا چاہوں گی، چاہے آپ کہیں بھی رہ رہے ہوں، آپ کو اپنی ثقافت اور سب سے اہم اپنی زبان کو نہیں بھولنا چاہیے۔ زبان ہی انسان کو اس کی پہچان دیتی ہے۔ اردو زبان سے محبت ہر کسی کے دل میں ہونی چاہیے۔ اس طرح ملک ترقی کرے گا-

شکریہ!

Leave a Reply

Your email address will not be published.

Translate »