مظفر آباد

بیورورپورٹ


مظفرآباد میں وزیراعظم آزاد کشمیر راجہ فاروق حیدر خان نے پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا ہے کہ وزیر اعظم پاکستان عمران خان اور وزراء کی آزاد کشمیر کے انتخابات میں براہ راست مداخلت کے خلاف اسلام آباد میں دھرنا دیں گے

وفاقی وزراء کی تلخ زبان وجہ سے آزاد کشمیر میں لا اینڈ آرڈر کی صورتحال پیدا ہو سکتی ہے
وزیر امور کشمیر پیسے دیتے ہوئے رنگے ہاتھوں پکڑے گئے ۔


یہ بھی پڑھیں

  1. آزادکشمیرالیکشن کمیشن نے امین گنڈاپور کو کیوں‌ نکالا ؟؟؟؟
  2. آزادکشمیرانتخابات میں‌حصہ لینے والی اہم جماعتوں کے بارے میں‌ جانیے
  3. آزاد کشمیر انتخابات ،45 نشستیں‌،701 امیدوار،28 لاکھ ووٹرز،فیصلہ 25 جولائی
  4. 13 جولائی اورتحریک آزادی کشمیر کو دوام بخشنے والی 22 شہیدوں‌ کی اذان

چیف سیکرٹری کوارڈینیشن کے لئے رکھا گیا ہے چیف ایگزیکٹو میں ہوں ۔ عوام پر فائرنگ کرنے والے وزیر امور کشمیر کے گارڈز کے خلاف مقدمہ درج کیوں نہیں کیا گیا ۔فاروق حیدر خان کا کہنا تھا کہ میں دوستوں کے ساتھ مشورہ کر رہا ہوں اسلام آباد دھرنا دینگے ۔

فاروق حیدر کا کہنا تھا کہ عمران خان عالمی ایجنڈے کے تحت لائن آف کنٹرول کو مستقل سرحد بنانا چاہتے ہیں ۔ پاکستان کے عوام کے سامنے اپنا مقدمہ رکھنا چاہتا ہوں ۔یہ وزیراعظم ہے جو آئین کو پامال کرتا ہے ۔

پی ٹی آئی نے لوگوں کو لڑانے کی کوشش کی، سیاست کو پراگندہ کر دیا ہے۔ پیسے دیکر لوگوں کے ضمیر خریدنے کی کوشش کی جا رہی ہے ۔

فاروق حید کا کہنا تھا کہ آپ ہمیں غلام سمجھتے ہیں ہم غلامی کی زندگی نہیں گزارنا چاہتے ۔ہمیں برابری کا حق چاہیئے ۔ تقسیم کشمیر اور آزاد کشمیر کو صوبہ نہیں بننے دینگے ۔

Translate »