سردارفیضان

ایبٹ آباد


طبی ماہرین نے ڈرامہ سیریل ارطغرل کو بینائی کے بڑھتے ہوئے مسائل کی وجہ قرار دیدیا ۔ایوب میڈیکل کمپلیکس کے شعبہ امراض چشم کے ماہرین کی جانب سے حال ہی میں جمع کردہ اعداد وشمار کے مطابق بالخصوص کووڈ کے دوران بچوں کے ٹی وی اور موبائل استعمال کرنے کی شرح میں زبردست اضافہ ہوا ،

ایوب میڈیکل کالج شعبہ امراض چشم کی سربراہ ڈاکٹر دانش ظفر کے مطابق حالیہ عرصہ کے دوران آنکھوں کے مسائل کے حوالے سے مریضوں کی تعداد میں اضافہ ہوا ،جس کے نتیجے میں 16 اپریل سے 7 جون تک ہسپتال میں آنے والے مریضوں اور وجوہات کا ڈیٹا جمع کرنے کا فیصلہ کیا گیا

ڈاکٹر دانش ظفر سربراہ شعبہ امراض چشم ایوب میڈیکل کالج ایبٹ آباد

زیادہ کیسز میں آنے والے متاثرین میں ڈرامہ سیریل ارطغرل کے شائقین شامل تھے ۔ان میں اکثر کی آنکھیں لکڑی کے تیرلگنے یا اس طرح کے کھلونوں سے کھیلنے کے نتیجے میں متاثر ہوئی تھیں

ڈاکٹر دانش ظفر کے مطابق 52 روز میں اس طرح کے متاثرین کی تعداد 10 تھی ،جن میں دو کی بینائی مکمل طور پر ختم ہوچکی تھی ،6 کی بینائی شدید متاثر تھی ،جبکہ ایک کی آنکھ کا بیرونی حصہ متاثر تھا

انہوں نے بتایا کہ زیادہ مریضوں کے کیس مطالعہ کے دوران یہ بات سامنے آئی کے گذشتہ ڈیڑھ دو سالوں کے ملک میں ٹی وی ڈرامہ سیریز کے دیکھنے میں نمایاں اضافہ ہوا

بالخصوص زیادہ تر مریضوں کے بیانات کے مطابق وہ زیادہ تر ترک ڈرامہ سیریل ارطغرل غازی دیکھتے رہے ہیںاورخاص طور پرکووڈ کے دوران بچوں کے گھروں کے اندر رہنے کے وقت میں اضافہ ہوا،اور ان کا زیادہ تر وقت موبائل یا ٹی وی دیکھنے میں گزرا جس کے نتیجے میں ان کی آنکھیں شدید متاثر ہوئیں


یہ بھی پڑھیں


بعض اوقات ایسے کیسز بھی سامنے آئے جن میں متاثرہ آنکھوں کی بینائی کو بحال کرنا انتہائی مشکل یا ناممکن ثابت ہوا

جب اس طرح کے کیسز عام ہوئے تو ہم نے اس پر کام کرنے کا فیصلہ کیا تاکہ ان وجوہات کا کھوج لگایا جاسکے اور عوام میں ان کے تدارک یا ممکنہ حد تک بچائو کیلئے آگاہی پیدا کی جاسکے

بچوں میں کھلونا تلواروں اور تیرکمان کی مقبولیت

اس میں پہلی وجہ جو سامنے آئی وہ زیادہ تر چھوٹے بچے تھے جو لکڑی کے تیر یا تلوار لگنے سے متاثر ہوئے ،کیوں کہ چھوٹے بچوں نے ڈرامہ دیکھنے کے بعد ان کھلونوں کا استعمال زیادہ کیا جو یا تو انہوں نے خود بنائے تھے یا اب بازاروں میں بھی باآسانی دستیاب ہیں

دوسرے نمبر زیادہ کیسز لکڑی یا پلاسٹک کی تلوارلگنے کے نتیجے ہونے والے زخمی تھے کیوں کہ ڈرامہ دیکھنے کے نتیجے میں بچوں میں ان کھلونوں کے بارے میں زیادہ شوق پیدا ہوا

حالیہ تحقیق کے بعد ہم اس نتیجے پر پہنچے ہیں کہ والدین اپنے بچوں کو ایسے کھلونوں سے ممکنہ حد تک دور رکھیں اور انہیں ہرگز خرید کر نہ دیں

ارطغرل ڈرامہ کے نتیجے میں قائی قبیلے کے نشانات کے حامل کھلونوں کی مانگ میں زبردست اضافہ ہوا اور اب عام طور پر بازاروں میں کلہاڑیاں اور تلواریں دستیاب ہیں جو ڈرامہ دیکھنے کے کے نتیجے میں بچوں میں انتہائی مقبول ہیں

اگر بچے گھر پر خود ایسے کھلونے بنا کر کھیل رہے ہیں تو والدین کو معلوم ہونا چاہیے کہ اس کے نتیجے میں ان کے بچوں کو زندگی بھر کیلئے پریشانی کا سامنا کرنا پڑسکتا ہے

ڈرامہ سیریل ارطغرل کے 10 کروڑ ناظرین

ترکی کا شہرہ آفاق ڈرامہ سیریل ارطغرل غازی پاکستان میں نہایت مقبول ہے جسے ہر عمر کے مردوخواتین اور بچے انتہائی انہماک سے دیکھتے ہیں چند ماہ قبل جاری ہونے والی ایک رپورٹ کے مطابق عالمی شہرت یافتہ ترک ڈرامے دریلیش ارطغرل نے پاکستان میں مقبولیت کے نئے ریکارڈ قائم کردئیے ۔ایک سال قبل اردو میں نشر ہونے والے ڈرامے کی پہلی قسط کو یوٹیوب پراب تک 10 کروڑ ناظرین دیکھ چکے ہیں ۔

واضح رہے کہ پاکستان کے سرکاری ٹی وی چینل پی ٹی وی نے ایک سال قبل عالمی شہرت یافتہ ترک ڈرامہ ارطغرل کو اردو ڈبنگ کیساتھ ناظرین کیلئے پیش کرنا شروع کیا تھا ۔

بامسی بے کی شہادت کے مناظر پر مشتمل قسط کو اب تک لاکھوں کی تعداد میں دیکھا جا چکا ہے اور کردار کے بچھڑنے پر صارفین کی جانب سے افسردگی کا اظہار کیا جارہا ہے

یوٹیوب پر پی ٹی وی کے ارطغرل چینل کے سبسکرائیبرز کی تعداد 1 کروڑ 30 لاکھ ہوچکی ہے ،جبکہ گوگل کی جانب سے جاری کردہ اعداد و شمار کے مطابق فلم ٹی وی کے درجہ میں سال 2020 میں پاکستان میں سب سے زیادہ تلاش کئے جانیوالے ڈراموں میں ارطغرل سرفہرست رہا

دریلیش ارطغرل جسے ترک گیم آف تھرون بھی قرار دیا جاتا ہے کی کہانی سلطنت عثمانیہ کے قیام کے ابتدائی حالات و واقعات پر مبنی ایک تاریخی ڈرامہ سیریل ہے جسے 13ویں صدی کے اناطولیہ کے خطے کے حالات و واقعات کے پس منظر میں فلمایا گیا

جس میں سلطنت عثمانیہ کے بانی عثمان کے والد ارطغرل غازی کی جدوجہد کو موضوع بنایا گیا

Translate »