مسرت اللہ جان

پشاور


پانچ سالہ مدت پر محیط کھیلوں کی سہولیات کا منصوبہ کیا ہے ،اس پر کتنی لاگت آئے گی ،اس میں کون کون سے منصوبے شامل ہیں اور ان پر کتنی لاگت آئے گی ۔اس حوالے سے پروجیکٹ ڈائریکٹر مراد علی مہمند کیساتھ ایک خصوصی نشست کا اہتمام کیا گیا جس میں اس منصوبے کی مکمل تفصیلات کو سامنے لانے اور اب تک منصوبوں پر ہونے والی پیش رفت کا جائزہ لیا گیا

مراد علی مہمند کے مطابق اس منصوبے کے تحت پورے صوبے میں کھیلوں کی ایک ہزار سہولیات فراہم کی جائیں گی ،جن میں نئے کھیل کے میدان تیار کرنے سمیت پہلے سے موجود سہولتوں کی بحالی یا بہتری بھی شامل ہے ۔

پانچ سالہ منصوبہ کی مجموعی تخمینہ لاگت 5 ارب روپے ہے  ۔اس منصوبے کا بنیادی مقصدپورے صوبہ خیبرپختونخواہ کی 1008 یونین کونسلوں میں کھیلوں کے انفراسٹرکچر کو قائم کرنا اور پہلے سے موجود سہولتوں کو اپ گریڈ کرنا ہے

تاکہ ہر یونین کونسل کی سطح پر نوجوان کھلاڑیوں کو اپنی کارکردگی کا مظاہرہ کرنے یا نشوونما پانے کے مواقع میسر آسکیں


یہ بھی پڑھیں


اس سوال کے جواب میں کہ یہ منصوبہ ابھی تک کون کون سے اضلاع میں جاری ہے اورکیا اس کا دائرہ کار کن کھیلوں پر محیط ہے

تو  مراد علی مہمندکا کہنا تھا  پورے خیبرپختونخواہ بشمول سابقہ قبائل اضلاع  چترال سے لیکر ٹانک تک  28 ضلعوں میں مختلف سہولت سکیموں پر کام جاری ہے ۔ان میں سے کچھ تکمیل کے قریب ہیں اور کچھ ابتدائی مراحل میں ہیں تاہم ہمارا ہدف ہے کہ ان تمام سہولتوں کو مقررہ مدت کے اندر ہرصورت مکمل کیا جائے

پہلے مرحلے میں 215 سکیموں کی منظور ہوچکی ہے جن میں کرکٹ گرائونڈز ،بیڈمنٹن ہالز سمیت دیگر کھیل شامل ہیں

مزید دیکھئے اس ویڈیو رپورٹ میں

 

Translate »