احمد کمال ،اسلام آباد


جنوبی امریکہ کے ملک ارجنٹینا نے پاکستان سے 12 جے ایف 17 تھنڈر بلاک 3جنگی جہاز خریدنے کا فیصلہ ،بجٹ میں 664 ملین ڈالر مختص ۔اس حوالے سے ارجنٹینا کی ایک دفاعی ویب سائیٹ aviaconline کے مطابق مالی سال 2022 کے بجٹ میں کانگریس میں طیاروں کی خریداری کے حوالے سے رقم مختص کرنے کے حوالے سے پیش کی جانے والی درخواست سے یہ بات واضح ہوچکی ہے کہ ارجنٹینا ایئرفورس کی روس ،امریکہ اور بھارت سے ہٹ کر ترجیحات کیا ہیں؟

کیوں کہ جو رقم مانگی گئی ہے وہ لگ بھگ وہی ہے جو پاکستانی ساختہ جے ایف 17 تھنڈرکی خریداری کیلئے مناسب ہے ۔کیونکہ اندازوں کے مطابق ایک طیارے کی قیمت 50 ملین ڈالر تک ہے ۔اس طرح دیکھا جائے تو مطلوبہ رقم میں تقریباً 12 طیارے خریدے جاسکتے ہیں ۔جبکہ اسی رقم میں 20 ملین نئے طیاروں کیلئے سہولتوں اور رن وے کی تیاری کیلئے بھی شامل ہے

رپورٹ میں مزید کہا گیا کہ ارجنٹینا ائرفورس کا حالیہ فیصلہ اگرچہ چینی ٹیکنالوجی کے حق میں نظر آتا ہے لیکن ابھی حتمی طور پر کوئی رائے قائم نہیں کی جاسکتی ۔تاوقتیکہ طیاروں کی خریداری کیلئے فنڈز جاری نہیں ہو جاتااور ان کی خریداری کا معاہدہ نہیں ہوجاتا ،جبکہ امکان یہی ہے کہ اس دوران انہیں متبادل پیشکش بھی کی جائیں گی


یہ بھی پڑھیں


واضح رہے کہ 2015 میں ارجنٹینا وزیردفاع آگسٹن روزی کے پہلے دور میں اسرائیل سے 14 جنگی طیاروں کی خریداری کیلئے 360 ملین ڈالر مختص کئے گئے ۔لیکن حکومت بدلنے کی وجہ سے بعدازاں فنڈز روک گئے ۔اور آخر کار صدر موریکو ماکری کے دور میں اسرائیلی طیاروں کا منصوبہ مکمل طور پر ختم کردیا گیا

رپورٹ میں مزید کہا گیا کہ فی الوقت بجٹ میں مانگی گئی رقم صرف ترجیحات کی وضاحت ہے ۔حتمی طور پرکوئی بھی رائے قائم کرنا قبل ازوقت ہوگا ۔

جے ایف 17 تھنڈر

پاکستان اور چین کے اشتراک سے تیار ہونے والا ملٹی رول سنگل انجن طیارہ ہے ،جو ہر قسم کے حالات میں حملہ اور دفاع کرنے کی صلاحیت رکھتا ہے ۔اس کی تیار ی کا تقریباً 60 فیصد کام اب پاکستان میں مکمل ہورہا ہے

دفاعی تجزیہ نگاروں کے نزدیک جے ایف 17 جدید ٹیکنالوجی اور صلاحیتوں کا حامل طیارہ ہونے کی وجہ سے اس وقت دنیا کی بہت سی فضائی افواج کی توجہ حاصل کرنے میں کامیاب ہورہا ہے ۔کیوں کہ صلاحیتوں کے لحاظ سے یہ دنیا کے کئی مہنگے جنگی طیاروں کا مقابلہ کرنے کی صلاحیت رکھتا ہے جس کی وجہ سے دنیا کے ترقی پذیر ممالک اس پر توجہ دے رہے ہیں ،اور بعض ممالک اسے اپنے فضائی بیڑے میں شامل کرچکے ہیں یا وہ اس پر غور کررہے ہیں اور اس میں دلچسپی ظاہر کررہے ہیں

واضح رہے کہ اس وقت پاکستان جے ایف 17 تھنڈر بلاک تھری ورژن طیارے تیار کررہا ہے ،جو پہلے ماڈلز کے مقابلہ میں زیادہ رفتار ،حد اور جدید ہتھیاروں سے لیس ہونے کے ساتھ ساتھ ماڈرن ٹیکنالوجی کا حامل ہے ۔جبکہ سابقہ ماڈل کی نسبت بلاک 3 طیارے دونشستی ہیں ۔

یو کے ڈیفنس جرنل جے ایف 17 کی خریداری کی خبروں کے حوالے سے اپنی ایک رپورٹ میں بتایا کہ ارجنٹینا کی جانب سے حالیہ سالوں کے دوران جنوبی کوریا سے طیارے خریدنے پر برطانیہ نے پابندی لگادی تھی ،جبکہ اس سے قبل بھی مذکورہ ملک متعدد بار جنگی طیارے خریدنے کی کوششیں کرچکا ہے لیکن مالی مسائل یا بیرونی دبائو کی وجہ سے وہ ایسا کرنے میں کامیاب نہ ہوسکا

پاکستان اور ارجنٹینا کے تعلقات

دونوں ممالک کے مابین تعلقات کا آغاز 1951 میں ہوا ،جبکہ 1984 میں پہلی بار دونوں ممالک کے درمیان پہلا معاہدہ ہوا ،جس کے بعد ہر گزرتے دن کے ساتھ ان میں گرمجوشی پیدا ہوتی رہی ۔2002 میں دوطرفہ تجارت کا معاہدہ ہوا جس کے بعد دونوں ممالک نے ایک دوسرے کو تجارت کیلئے پسندیدہ ملک قرار دیا

اس کے علاوہ ارجنٹینا نے پاکستان کی جانب سے اقوام متحدہ میں کشمیر کی حوالے سے پیش کی جانے والی تمام قراردادوں کی ہمیشہ حمایت کی اس کے علاوہ متعدد عالمی مسائل کے حوالے سے بھی دونوں ممالک کے موقف میں یکسانیت پائی جاتی ہے جو دوطرفہ اعتماد کا مظہرہے

 

Translate »